بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

گاجر کے غذائی اور طبی فوائد

گاجر کے غذائی اور طبی فوائد

محترمہ حریم نیازی

گاجر پھل ہے یا سبزی ؟ جب مارکیٹ سے گاجریں لینے جائیں تو یہ ہمیں سبزی کے خانوں میں ہی ملتی ہیں۔ لیکن پھر اس کی مٹھاس دیکھ کر خیال آتا ہے کہ یہ پھل کا پھل اور سبزی کی سبزی ہے ۔یہ کچی کھائیں،سلا د بنائیں، پکائیں یاجوس پئیں اس کا فائدہ ہی فائدہ ہے ۔ اور تو اور مربہ اور اچار بناکرشوق سے استعمال کرتے ہیں ۔علاوہ ازیں اس کا استعمال فیس ماسک بنانے میں بھی کیا جاتا ہے ۔غرض یہ کہ گاجر غذائی افادیت اور لاتعداد بیماریوں کا علاج اس سبزی میں پوشیدہ ہے ۔

ایک زرعی نمائش میں ایک دفعہ جب میں نے زرعی اجناس کے ایک اسٹال پر سجی انواع و اقسام کی سبزیاں اور پھلوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے وہاں پر کھڑے ایک زرعی ماہر سے یہ دریافت کیا کہ ان سب پھلوں اور سبزیوں میں کسی ایسے پھل یا سبزی کی نشان دہی کریں جو غذائیت سے مالا مال ہو۔تو اُس نے برق رفتاری سے ایک گاجر اٹھائی اور کہا یہ ایک ایسی سبزی ہے ،جس میں کسی بھی پھل یا سبزی سے زیادہ غذائی اجزا ء ہوتے ہیں۔

اس میں وٹامن اے ، بی، سی ، ڈی ،ای اور کے سمیت پروٹین، پوٹاشیم ،کیلشیم ،آئرن، کاپر اور دیگر اجزا پائے جاتے ہیں۔ اس کے بارے میں جدید تحقیق سے یہ معلوم ہوا کہ ایک کپ پکی ہوئی گاجر میں 70 کیلوریز اور 4 گرام فائبر ہوتا ہے ۔ ایک کپ گاجرمسلسل تین ہفتے کھانے سے 11فی صد تک کولیسٹرول کم کیا جا سکتا ہے۔ ایک گاجر میں وٹامن اے کی مقدار ایک انسان کی دن بھر کی ضرورت سے کہیں زیادہ ہوتی ہے ۔

اس میں موجود بیٹا کیروٹین شوگر لیول کو اعتدال میں رکھنے میں مدد گار ثابت ہوتا ہے ۔اس کا باقاعدہ استعمال کینسر کے خطرات بالخصوص پھیپھڑوں کے کینسر کو کم کرتا ہے۔ اس کا استعمال رات کے اندھے پن (Night blindness)کو روکتا ہے ۔کچی گاجر کی غذائیت پکی گاجر کی نسبت زیادہ ہوتی ہے۔ابلی ہوئی گاجر کی نسبت ہلکے تیل میں پکی ہوئی گاجر زیادہ فائدہ مند ہوتی ہے ۔لیکن اس کا ضرورت سے زیادہ استعمال بھی جلد میں پیلاہٹ پیدا کردیتا ہے۔

غذائی افادیت
گاجر میں چوں کہ غذائی اعتبار سے ان گنت فوائد پوشیدہ ہیں اور یہ وٹامن اے کا ایک بہت بڑا ذریعہ بھی ہے ۔اسی لیے اس میں شامل کیروٹین جو دراصل لفظ کیرٹ سے ماخذ ہے۔کیروٹین دراصل وٹامن کی ابتدائی شکل کو کہتے ہیں ۔یہ انسانی جسم میں جا کر جگر کی مدد سے وٹامن اے بناتے ہیں۔ گاجر بچوں، بڑوں سب کے لئے سود مند ہے ۔اس کا جوس اپنے اندر صحت کا خزانہ لیے ہوئے ہے ، اسی لیے شاید اسے کرشماتی مشروب کہتے ہیں۔ گاجر کا جوس پینے سے جگر میں موجود زہریلے مواد ختم ہوجاتے ہیں۔

اس میں وٹامن کے اور وٹامن ڈی کیلشیم کے ساتھ مل کر ہڈیوں کو مضبوط بناتے ہیں۔ اس میں چوں کہ آئرن کی وافر مقدار پائی جاتی ہے ،اس لیے اس کے مسلسل استعمال سے خون کی کمی کو احسن طریقے سے پورا کیا جا سکتا ہے ۔گاجر میں چوں کہ بے شمار وٹامنز، منرلز ،غذائی فائبر اور اینٹی آکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں ،جس کے سبب یہ ہمارے جسم کے سیلز کو خراب ہونے سے بچاتے ہیں،غرض یہ کہ گاجر میں بے شمار امراض کا علاج پوشیدہ ہے ۔ یہ قوت مدافعت بڑھاتی ہے ۔ خون میں موجود سفید خلیوں کی مقدار میں اضافہ بھی ہوتا ہے۔

معدے کے امراض کا علاج
گاجر کھانے سے معدے میں ایسی رطوبتیں بننا شروع ہو جاتی ہیں ،جس سے نظام انہضام بہتر اور غذا جلد ہضم ہوتی ہے۔گاجر کا متواتر استعمال معدے کے السر سے بھی محفوظ رکھتا ہے ،اس میں چوں کہ فائبر کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے، جس کے سبب یہ قبض سے بھی محفوظ رکھتا ہے ۔

امراض قلب سے بچاو
کولیسٹرول دل کے مریضوں کے لیے سب سے بڑا خطرہ مانا جاتا ہے ۔ایک تحقیق کے مطابق گاجر خون میں کولیسٹرول کو کم کرتی ہے، جس کی وجہ سے اسے کھانے والے دل کی بیماریوں سے محفوظ رہتے ہیں۔ ایک تحقیق کے مطابق گاجریں کھانے والے لوگوں میں نہ کھانے والے لوگوں کی نسبت دل کے دورے کا امکان 23 فی صد کم پایا گیا۔

جلد کی حفاظت
گاجر میں موجود آکسیڈنٹس اور وٹامن اے سورج کی شعاعوں کے اثرات سے جلد کی حفاظت کرنے کی بہتر صلاحیت رکھتے ہیں، جس سے چہرے کی جھریاں ،چھائیاں اور دھبے ختم ہوتے ہیں، نیز اس کا مسلسل استعمال جلد کی رنگت کو نکھارتا ہے ۔

دانتوں کا موثر علاج
گاجر چوں کہ ایک ریشہ دار سبزی ہے اس لیے اسے چبا کر کھانے سے منھ میں جو لعاب بنتا ہے ،اس کے سبب دانت کیڑا لگنے سے محفوظ رہتے ہیں۔ اس کا متواتر استعمال دانتوں کو صاف کرتا ہے۔ یہ دانتوں کو قوت دے کر توڑ پھوڑ سے محفوظ رکھتی ہے ۔

بینائی کا علاج
گاجر میں چوں کہ بیٹا کیروٹین کی وافر مقدار موجود ہوتی ہے، جو دراصل وٹامن اے کی ابتدائی شکل ہوتی ہے اورجگر کی مدد سے وٹامن اے میں تبدیل ہو جاتی ہے ۔لہٰذا وٹامن اے ہماری آنکھوں کے پٹھوں کو مضبوط بناتا ہے اور بیٹا کیروٹین کی فراوانی کی وجہ سے آنکھوں کی دیگر بیماریوں، مثلا موتیااور رات کا اندھا پن یعنی نائٹ بلائنڈ نیس Night blindnessسے موثر تحفظ ملتا ہے ۔

کینسر سے تحفظ
گاجر کو غذا کا حصہ بنانا انتہائی سود مند ہے، اس کا استعمال بڑی آنت، پھیپھڑوں اور چھاتی کے کینسر سے محفوظ رکھتاہے ،اس کا تازہ جوس پینا بے حد مفید ہے ۔یہ کینسر پیدا کرنے والے خلیات کی روک تھام کرتا ہے۔چوں کہ فائبر کثرت سے اور کیلوریز کی مقدار نسبتاََ کم ہوتی ہے اس لیے یہ وزن کو بڑھنے سے روکتی ہے۔