بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيم

کَچی سبزیوں کے پکے فوائد

کَچی سبزیوں کے پکے فوائد

محترم فاروق احمد انصاری

عجیب سی بات ہے کہ کچی سبزیاں ذوق وشوق سے کھانے والے اپنی اس عادت کا اعتراف کرنے سے ہچکچاتے ہیں۔ کچی سبزیوں کے بیش بہا فوائد کی وجہ سے اس کا اعتراف کرنے میں ہچکچانے کی کوئی بات نہیں ۔ بے شک کچھ سبزیوں کو کچا کھانے میں ان کا ذائقہ اچھا نہیں لگتا، مگر صحت پر ان کے دیر پا اثرات رہتے ہیں، خاص طور پر یہ نظام ہاضمہ کے لیے انتہائی مفید ہوتی ہیں۔ یہ بات بھی مسلّمہ ہے کہ ہاضمہ ٹھیک ہوتا ہے تو صحت بھی ٹھیک رہتی ہے۔
کچی سبزیوں کے فوائد کہیں نہ کہیں ہمارے لا شعور میں ہوتے ہیں تبھی تو پُر تکلف دعوتوں او رمرغ مسلم والی محفلوں میں سلاد کے بغیر ضیافت ادھوری سمجھی جاتی ہے۔ کچی سبزیوں کا سب سے بڑا فائدہ تو بہر حال یہ ہے کہ انہیں ایسے ہی کھانے سے غذائیت ضائع نہیں ہوتی، جب کہ انہیں پکانے کے دوران اس بات کا احتمال ہو سکتا ہے۔ آئیں جانتے ہیں کہ کون سی کچی سبزی کتنی فائدہ مند ہے۔

پالک اور چقندر
فولاد چاہیے تو پالک کھائیے، لیکن ساتھ ہی آئرن سے بھرپور چقندر کھانا بھی نہ بھولیے، اس میں وٹامن سی بھی ہوتاہے، جو آپ کی آنتوں کو آئرن بہتر طور پر جذب کرنے میں مدد کرتا ہے۔ اگر آپ کو کچے چقندر پسند نہیں تو اس کے سلائس بنا کر تھوڑا سا نمک اور لیموں کا عرق چھڑک کر ایک گھنٹے کے لیے رکھ دیں، چاہیں تو نرم کرنے کے لیے تھوڑا سا پکالیں اور اس پر پالک کاٹ کر ڈال دیں۔ اس کے بعد کالی مرچ چھڑک کر تناول فرمائیں، آپ یقینا اچھا محسوس کریں گے۔

بندگوبھی اور ہری مرچ
آپ ہری یا عنابی گوبھی، ہری مرچ کے ساتھ ملا کر کھاسکتے ہیں۔ گو بھی بہت سارے وٹامن گروپس کا بہترین ذریعہ ہے او رقابل ہضم فائبرز بھی فراہم کرتی ہے۔ ہری مرچ میں موجود وٹامن سی، گوبھی سے حاصل ہونے والے منرلز کو ہضم کرنے کے عمل میں تیزی لاتی ہے۔ اس کے علاوہ ہری مرچ ذائقہ بڑھانے کے ساتھ ساتھ آپ کو پوٹاشیم، مینگینز اور دیگر وٹامنز بھی فراہم کرے گی۔

دونوں سبزیوں کے امتراج کو نمک، چینی، لیموں اور ادرک سے آراستہ کر لیں۔ اگر چھوٹی ہری مرچ کھاسکتے ہیں تو وہ بھی ملالیں، ورنہ بڑی مرچ ہی کافی ہے۔

ٹماٹر اور شملہ مرچ
رنگین شملہ مرچ قوت مدافعت بڑھانے والے وٹامنزسے بھرپور ہوتی ہے۔ اسے ایسیڈیٹی دور کرنے والے ٹماٹر کے ساتھ ملاکر استعمال کیا جائے تو یہ آپ کے جسم کے لیے بے پناہ فائدہ مند ہوگی۔ ویسے بھی جب آپ رنگ برنگی شملہ مرچوں کو دیکھیں گے تو شاید اپنا ہاتھ روک نہ پائیں۔ آپ انہیں سرکہ کے ساتھ بھی استعمال کرسکتے ہیں۔

ٹماٹر او رشملہ مرچوں کے امتزاج میں پریسلے کے تازہ پتے ملا لیں، جو کیلشیم اور وٹامن ڈی سے بھرپور ہوتے ہیں یا اس کے متبادل کے طور پر تازہ دھنیا چھڑک لیں، جس میں اینٹی آکسیڈنٹ خصوصیت ہوتی ہے اوریہ مرچوں سے حاصل شدہ وٹامنز کو مکمل بنا دیتا ہے۔

گاجر او رمولی
دونوں سبزیوں کو باریک کاٹ لیں او ران پر نمک اور لیموں چھڑک لیں۔ مولی کی ترشی کا مداوا گاجر کرے گی۔ اس امتزاج کے ساتھ آپ مولی کے پتے اورایواکاڈو کے سلائس بھی استعمال کرسکتے ہیں۔ ایواکاڈوآپ کو اومیگا تھری فیٹی ایسڈ فراہم کرتا ہے، جو قدرتی غذاؤں سے بمشکل حاصل ہوتا ہے۔ مولی کی ہاضمہ بہتر کرنے کی قابلیت آپ کے جسم میں گاجر ہضم کرنے کے عمل کو تیز اور بہتر کرتی ہے۔

آپ دونوں سبزیوں کو نمک، چینی، لیموں یادہی کے ساتھ ملا کر تناول فرماسکتے ہیں۔ گاجر آپ کے جسم کی اندر سے صفائی کرتی ہے، جب کہ مولی میں اینٹی فنگل(جسم کے اندر فنگس والے انفیکشن کے خلاف) خصوصیت ہوتی ہے، اس لیے دونوں کا امتزاج بہت پاور فل بن کے سامنے آتا ہے۔

کچی سبزیوں کے دیگر فوائد
جاپان میں لوگ سو سو سال تک زندہ رہتے ہیں او رانہیں موذی بیماریاں چھو کر نہیں گزرتیں۔ ہنزہ اور وادی کشمیرمیں بھی لوگ بغیر بیمار ہوئے عمر کی سینچری کر گزرتے ہیں۔ اس کی وجہ یہی ہے کہ وہ لوگ قدرت کی عطا کردہ غذائیں کھاتے ہیں، ان میں زیادہ تر پھل، کچی سبزیاں اور خشک میوے شامل ہیں اور وہ پروسیڈ غذاؤں سے بالکل نابلد ہیں۔ عموماً وہاں آپ کو دل، ذیابیطس اور جوڑوں کے درد کے مریض نہیں ملتے۔ اسی طرح نیوزی لینڈ میں کی گئی ایک تحقیق کے مطابق جو لوگ پھل اور سبزیاں کم کھاتے ہیں، ان میں ڈپریشن کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔18 سے25 سال کے چار سو افراد پر کی گئی ایک ریسرچ کے بعد ماہرین کا کہنا تھا کہ آپ گہری رنگت کے پتوں والی سبزیوں، کھیرا، کیوی، گاجر اور تازہ بیریز زیادہ سے زیادہ کھائیں، کیوں کہ ان سے جسم میں انفلیمیشن کم ہوتی ہے اور ذیابطیس جیسی بیماریاں دور رہتی ہیں۔

کارآمد مشورے
∗… سبزیاں استعمال کرنے سے پہلے انہیں اچھی طرح دھولیں۔

∗… جڑوں والی سبزیوں کو پانی میں سرکہ ڈال کر دھوئیں، تاکہ چھپے ہوئے جراثیم ہٹ جائیں۔
∗… پتوں والی سبزیاں جیسے لیٹس(Lettuce) اور اجوائن کے پتے(Celery) تقریباً ہر سبزی کے ساتھ استعمال ہوسکتے ہیں۔

∗… تازگی ،ذائقہ اور غذائیت بڑھانے کے لیے آپ تازہ ہرب جیسے کہ کالی تلسی، اجوائن، پودینہ، پارسلے اور دھنیا استعمال کرسکتے ہیں۔

∗… کھیرے دل ودماغ کو ٹھنڈک بخشتے اور ڈی ہائڈریشن سے دور رکھتے ہیں، انہیں اجوائن یا پودینے کے ساتھ استعمال کیا جاسکتا ہے۔