جامعہ فاروقیہ کراچی ۔۔ انٹرنیشنل اسلامک یونی ورسٹی

سوہانجنامزے دار ومفید پھلی

کرن حیا فاروقی

پھلیوں کے خاندان سے تعلق رکھنے والی اس پھلی کو سوہانجنا کہتے ہیں۔ اس کا درخت کرشماتی خواص رکھتا ہے۔ یہ جنوبی ایشیا، مشرقِ بعید اور افریقی ممالک میں پایا جاتا ہے۔ سوہانجنا کے درخت کا ہر حصہ اپنی اہمیت وافادیت رکھتا ہے، لہٰذا اس کے تقریباً ہر حصہ کو کھایا جاسکتا ہے۔

سوہانجنا میں دودھ کے مقابلے میں 17 گنا زیادہ کیلسئیم ہوتا ہے۔ اس پھلی کو مختلف دالوں میں ملا کر پکایا جاسکتا ہے۔ سوہانجنا میں9 گنا زیادہ لحمیات (پروٹینز) پائی جاتی ہیں، جب کہ گاجر کے مقابلے میں 4 گنا زیادہ حیاتین الف ( وٹامن اے) ہوتی ہے۔ اس میں کیلے کے مقابلے میں پندرہ گنا زیادہ پوٹاشئیم پایا جاتا ہے۔ پالک کی نسبت سوہانجنا میں 19 گنا زیادہ فولاد ہوتا ہے۔ خون کی کمی والے افراد کو ہر ہفتے یہ مفید پھلی کھانی چاہیے۔

سوہانجنا کے تازہ پتوں کو پالک کی طرح پکایا او رکھایا جاسکتا ہے۔ انہیں سلاد میں بھی شامل کیا جاسکتا ہے۔ اس کے علاوہ ان پتوں کو سُوپ اور چاولوں میں بھی ڈالا جاسکتا ہے۔ اس کے درخت کی جڑ کو نہیں کھانا چاہیے، اس لیے کہ اس میں ایک زہریلا مادّہ ہوتا ہے، جو مضرِ صحت ہوتا ہے۔

بچوں کو چھاتی سے دودھ پلانے والی ماؤں کے لیے سوہانجنا بہت فائدہ مند ہے۔ اس سے چھاتیوں میں زیادہ دودھ آتا ہے اور یہ زیادہ صحت بخش بھی ہوتا ہے۔ سوہانجنا مہنگی سبزی نہیں ہے۔ جو غریب افراد پھل اور گوشت خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے، انہیں ہر ہفتے یہ پھلی کھانی چاہیے، اس لیے کہ یہ پھل اور گوشت سے ملنے والی ساری غذائی ضروریات کا بہت اچھا نعم البدل ہے۔

سوہانجنا کو پانی صاف کرنے کے لیے بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔ عام طور پر پانی کو صاف کرنے کے لیے کلورین استعمال کی جاتی ہے، جو ایک کیمیائی جزہے، جب کہ سوہانجنا ایک نباتاتی جزہے، جس کے پہلوئی اثرات(Side Effects) بھی نہیں ہوتے۔ پانی صاف کرنے کے لیے سوہانجنا کے بیجوں کو خشک کرکے اس کے چھلکوں کو ہلکا سا کوٹ کر الگ کر لیا جاتا ہے۔ ان سے سفید مغز نکلتا ہے، جسے پیس کر سفوف بنا لیا جاتا ہے۔ سفوف کی 50 گرام مقدار سے ایک لیٹر پانی کو صاف کیا جاسکتا ہے۔ پانی صاف کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ سفوف کو پانی میں ملا کر تھوڑی دیر کے لیے چھوڑ دیا جاتا ہے، اس کے بعد پانی کو چھان لیا جاتا ہے۔ اس طرح گھریلو سطح پر پینے اورکھانا پکانے کے لیے پانی کو صاف کیا جاسکتا ہے۔

سوہانجنا صحت بخش پھلی ہے۔ اسے دوسری پھلیوں کی طرح ہر ہفتے کھانا چاہیے۔ سوہانجنا سے اچار بھی بنایا جاتا ہے، جو بہت ذائقے دار ہوتا ہے۔ اس کے پھول بطور سالن پکائے جاتے ہیں۔ یہ پھلی خون کو صاف کرتی ہے۔ یہ ادویہ میں بھی شامل کی جاتی ہے۔



English
عربي

ابتداء
اپنے بارے میں
جامعہ فاروقیہ
الفاروق
اسلام
قرآن
کتب خانہ
منتحب سائٹس
This site is developed under the guidance of eminent Ulamaa of Islam. 
Suggestions, comments and queries are welcomed at info@farooqia.com
ابتداء  |  اپنے بارے میں  |  جامعہ فاروقیہ  |  الفاروق  |  اسلام  |  قرآن  |  کتب خانہ  |  منتخب سائٹس
No Copyright Notice.
All the material appearing on this web site can be freely distributed for non-commercial purposes. However, acknowledgement will be appreciated.