جامعہ فاروقیہ کراچی ۔۔ انٹرنیشنل اسلامک یونی ورسٹی

سگرٹ سے دل ، دماغ اور پھیپڑے متاثر

سگرٹ کے نقصانات کے بارے میں تقریباً سبھی جانتے ہیں۔ زیادہ عرصے تک سگرٹ نوشی کرنے سے پھیپڑوں کا سرطان ہو جاتا ہے اور دل کی بیماریاں بھی ہو جاتی ہیں، مگر بعض سگرٹ نوش خود پر پڑنے والے اثرات کو مثبت سمجھتے ہیں۔ ان کا خیال ہے کہ وہ سگرٹ پی کر چاق چوبند ہو جاتے ہیں، ان کا دماغ متحرک ہو جاتا ہے اور وہ اپنے کام پر بھرپور توجہ دینے کے قابل ہوجاتے ہیں۔ کیا واقعی سگرٹ نوشی سے ایسے مثبت اثرات پڑتے ہیں؟ نہیں، یہ حقیقت نہیں ہے۔ اگر سگرٹ نوش ایسا سمجھتے ہیں تو وہ فریب میں مبتلا ہیں۔ آئیے! جائزہ لیتے ہیں کہ سگرٹ نوشی سے دماغ کو کیا نقصان پہنچتا ہے۔

جب آپ سگرٹ سلگا کر ایک گہرا کش کھینچتے ہیں اور اس کا دھواں حلق میں اتارتے ہیں تو دس سیکنڈ کے اندرنکوٹین آپ کے خون میں شامل ہو جاتی ہے۔ یہ ان رکاٹوں کو ختم کر دیتی ہے، جو دماغ کی حفاظت کرتیں اور کثافتوں کو اس تک پہنچنے نہیں دیتیں۔ اس کے بعد نکوٹین دماغ کے خلیوں پر اثر انداز ہونے لگتی ہے۔ جب آپ پہلا سگرٹ پی لیتے ہیں تو 1.5 ملی گرام نکوٹین آپ کے خون میں شامل ہو جاتی ہے، جس سے جسم کے کیمیائی مادّوں کو تحریک ملتی ہے۔ چناں چہ دماغ میں خون کے دوڑنے کی رفتار میں اضافہ ہو جاتا ہے۔

جب آپ دس کش کھینچ کر سگرٹ کو راکھ بنا دیتے ہیں تو یہ محسوس کرنے لگتے ہیں کہ دماغ توانا ہو گیا ہے اور آپ کے خیالات واضح ہوچکے ہیں۔ اب آپ ارتکازِ توجہ کرسکتے اور سگرٹ نہ پینے والوں کی نسبت زیادہ اچھی طرح سے سوچ سکتے ہیں۔ مگر حقیقت یہ ہے کہ اگر آپ کا دماغ متحرک ہو گیا ہے تو محض اس وجہ سے کہ اس پر نکوٹین کا اثر ہوچکا ہے اور یہ پہلا مرحلہ ہے۔ تھوڑی دیر بعد آپ دوسرے مرحلے میں داخل ہو جاتے ہیں۔

تقریباً تیس منٹ بعدو ہ نکوٹین جو آپ نے سگرٹ نوشی کے بعد اپنے جسم میں داخل کی ہے، کم ہو جاتی ہے۔ چناں چہ آپ یہ محسوس کرنے لگتے ہیں کہ دماغی توانائی میں کمی آچکی ہے۔ پھر آپ ایک اور سگرٹ سلگا لیتے ہیں اور یہ محسوس کرتے ہیں کہ جوش وجذبے میں اضافہ ہو گیا ہے۔ اب آپ کی کارکردگی بہتر ہو جائے گی۔ صورت ِ حال میں اب تبدیلی پیدا ہو جاتی ہے اور نکوٹین دماغ کے کیمیائی اجزا کو حرکت میں لے آتی ہے۔ دوسری سگرٹ پینے کے بعد آپ پر متضاد کیفیت طاری ہونے لگتی ہے۔ پہلا سگرٹ پینے کے بعد دماغ متحرک ہو جاتا ہے، جب کہ دوسرا سگرٹ پینے کے بعد آپ پُرسکون ہو جاتے ہیں، لیکن پھر تھوڑی دیر بعد طبیعت بوجھل ہونے لگتی ہے۔

تیس منٹ مزید گزرتے ہیں تو آپ بے کیفی محسوس کرتے ہیں اورکام کی طرف سے آپ کی توجہ ہٹنے لگتی ہے۔ نگاہ بار بار سگرٹ کے پیکٹ کی طرف اُٹھتی ہے اور نکوٹین کی طلب ہونے لگتی ہے، بالکل اسی طرح سے جیسے کہ عام افراد کو چاکلیٹ کھانے کی عادت ہوتی ہے۔ نکوٹین دماغ کی حالت کو تبدیل کر دیتی ہے، لہٰذا جب نکوٹین دماغی خلیوں میں موجود ہوتی ہے تو دماغ معمول کے مطابق کام کرنے لگتا ہے، لیکن جب نکوٹین نہیں ہوتی تو دماغ غیر فعال ہو جاتا ہے۔ مسلسل سگرٹ پینے سے دماغی انتشار میں اضافہ ہو جاتا ہے۔ مایوسی پیدا ہوجاتی ہے۔ بے سکونی اور بے خوابی بڑھ جاتی ہے اور دل کی دھڑکن میں اضافہ ہونے لگتا ہے۔ حال ہی میں امریکا کی بہت سی فضائی کمپنیوں نے پائلٹوں پر پابندی لگا دی ہے کہ وہ پرواز کے دوران سگرٹ نہ پییں، اس لیے کہ سگرٹ نوشی سے ان کا دماغ متاثر ہوسکتا ہے۔ نکوٹین کے علاوہ سگرٹ میں کاربن مونواوکسائڈ بھی ہوتی ہے۔ اس گیس سے جسم میں موجود اوکسی جن جلنے لگتی ہے۔ خون کے سرخ ذرّات(HEMOGLOBIN) اوکسی جن کو جسم کے سارے خلیوں تک پہنچاتے ہیں، مگر کاربن مونواوکسائڈ کی موجودگی میں خلیے اوکسی جن اچھی طرح سے جذب نہیں کر پاتے۔ اس طرح کاربن مونواوکسائڈ کی وجہ سے خون کے سرخ ذرّات ختم ہوتے رہتے ہیں او رموت کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔

ہر سگرٹ سے 20 ملی گرام کاربن اوکسائڈ کی مقدار آپ کے پھیپڑوں میں چلی جاتی ہے۔ اس طرح سے سگرٹ پینے کے دوران جسم میں 3 سے 9 فی صد اوکسی جن جل جاتی ہے۔ مسلسل سگرٹ پینے سے اوکسی جن جلنے کا عمل 10 فی صد ہو جاتا ہے۔ دماغی صلاحیت میں کمی ہو جاتی ہے ،مشاہدے او رتحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ سگرٹ نوش بہت سے کام صحیح طور پر انجام دے سکتا ہے، بشرطے کہ کاموں میں پیچیدگی نہ ہو۔ مثال کے طور پر وہ کار چلاسکتا ہے، لیکن اس کی کارکا ایک ٹائر اچانک پھٹ جائے تو وہ اس صورت ِ حال سے نہیں نمٹ سکے گا، جب کہ سگرٹ نہ پینے والا اس صورت ِ حال کو خوش اسلوبی سے سنبھال لے گا۔ سگرٹ نوش پائلٹ طیارہ اُڑاسکتا ہے، مگر ہنگامی حالت میں اس کے ہاتھ پاؤں پھول جائیں گے اور اس صورت میں کوئی حادثہ بھی ہوسکتا ہے، کیوں کہ سگرٹ نوشی سے اس کا دماغ متاثر ہو چکا ہوتا ہے۔

اب دن کا پہلا سگرٹ سلگاتے وقت سگرٹ نوش کو مذکورہ نقصانات کا خیال رکھنا اور سگرٹ نوشی سے توبہ کر لینی چاہیے۔



English
عربي

ابتداء
اپنے بارے میں
جامعہ فاروقیہ
الفاروق
اسلام
قرآن
کتب خانہ
منتحب سائٹس
This site is developed under the guidance of eminent Ulamaa of Islam. 
Suggestions, comments and queries are welcomed at info@farooqia.com
ابتداء  |  اپنے بارے میں  |  جامعہ فاروقیہ  |  الفاروق  |  اسلام  |  قرآن  |  کتب خانہ  |  منتخب سائٹس
No Copyright Notice.
All the material appearing on this web site can be freely distributed for non-commercial purposes. However, acknowledgement will be appreciated.