جامعہ فاروقیہ کراچی ۔۔ انٹرنیشنل اسلامک یونی ورسٹی

فتنوں کا دور

عبید اللہ خالد

حضور اکرم صلی الله علیہ وسلم خاتم الانبیاء ہیں۔ آپ کے بعد کوئی نبی نہیں آئے گا۔ دین اسلام الله تعالیٰ کاآخری پیغام ہدایت ہے او رانسانوں کے لیے اس میں مکمل راہ نمائی موجود ہے۔ یہ دور فتنوں سے پُر ہے۔ احادیث کی کتابوں میں ”کتاب الفتن“ کے نام سے مستقل عنوان قائم کیا گیا ہے اور اس میں ان احادیث کو جمع کیا گیا ہے جن میں قیامت تک آنے والے فتنوں سے متعلق معلومات دی گئی ہیں اور ایسے وقت میں مسلمانوں کو کیا کرنا چاہیے؟ اس کی طرف راہ نمائی کی گئی ہے۔ ویسے تو انسان کی پوری زندگی ہی آزمائش ہے۔ الله تعالیٰ نے انسان کو پیدا فرماکر اس کا تعلق اہل وعیال، عزیز واقارب او رمال ودولت وغیرہ مختلف چیزوں سے جوڑ دیا اور ان کے حقوق پہچاننے اوران حقوق کوادا کرنے کی ذمہ داری اس پر ڈال دی۔ لیکن کتاب الفتن میں اس آزمائش کے علاوہ وہ مختلف حالات وحوادث اور امور جن کی وجہ سے انسان کے دین وایمان کو خطرہ لاحق ہوجائے اور اس کے فتنہ وفساد میں مبتلا ہونے کا اندیشہ پیدا ہو جائے، بیان کیے گئے ہیں ۔ حدیث میں حضرت عمر رضی الله عنہ کی ذات گرامی کو فتنوں کے سامنے بند دروازے سے تعبیر کیا گیا ہے کہ ان کی حیات اور موجودگی میں فتنوں کا ظہور نہیں ہوگا، جب وہ اس دنیا سے تشریف لے جائیں گے تو فتنوں کا دروازہ کھل جائے گا اور یہ دروازہ پھر بند نہیں ہوگا۔ چناں چہ ایسا ہی ہوا کہ حضرت عمر رضی الله عنہ کی شہادت کے بعد امت مسلمہ مختلف قسم کے فتنوں، آزمائشوں او رجنگ وقتال میں مبتلاہو گئی۔ فتنوں کا یہ دروازہ پھر بند نہیں ہوا اور امت مسلمہ وقتاً فوقتاً مختلف قسم کے فتنوں اور آزمائشوں کا شکار ہوتی چلی آرہی ہے۔ البتہ ان فتنوں کی نوعیت تبدیل ہوتی رہی ہے۔ حضرت اسامہ بن زید رضی الله عنہ سے بخاری ومسلم کی ایک روایت میں مروی ہے کہ ایک دن نبی کریم صلی الله علیہ وسلم مدینہ منورہ کے ایک بلند مکان (کی چھت) پر چڑھے اور (صحابہ کرام رضی الله عنہم کو مخاطب کرکے) فرمایا کہ ”کیا تم اس چیز کو دیکھتے ہو جس کو میں دیکھ رہا ہوں؟“ صحابہ رضی الله عنہم نے جواب دیا کہ نہیں۔ آپ نے فرمایا کہ حقیقت یہ ہے کہ میں ان فتنوں کو دیکھ رہا ہوں جو تمہارے گھروں پر اس طرح برس رہے ہیں جس طرح کہ بارش برستی ہے۔ (بخاری ومسلم)

فتنوں کے حوالے سے دور حاضر انتہائی حساس ہے اور بیدار مغزی و احتیاط کا مقتضی ہے۔ انفرادی اور اجتماعی ہر اعتبار سے مسلمان آزمائش کا شکار ہیں۔ کفریہ اور شیطانی طاقتیں مختلف ذرائع، اسباب اور انداز واسلوب اختیار کرکے مسلمانوں کے دین وایمان پر ڈاکا ڈالنے کی کوشش کررہی ہیں۔ عالمی سطح پر مسلمانوں کے خلاف سازشوں کے جال بچھائے جارہے ہیں اور یہ صورت حال کسی عقل مند پر مخفی نہیں ہے۔ بیت المقدس پر یہودیوں کے قبضے اور تسلط کو مضبوط ومستحکم کرنے کے لیے مسلم ممالک میں مسلسل انتشار پھیلانے، خانہ جنگی کا ماحول پیدا کرنے اور ان کو آپس میں دست وگریباں کرنے کی کوششیں عروج پر ہیں۔ دنیا کے مختلف خطوں میں مسلم آبادی کے اکثریتی علاقوں میں ظلم وجبر کے مختلف ہتھکنڈے استعمال کرکے مسلمان آبادی کو دین سے دور اور مفلوج کرنے کی کوشش وسعی جاری ہے، جس پر مسلم ممالک اور حکم رانوں کی طرف سے کوئی موثر آواز سامنے نہیں آرہی اور نہ ہی وہ ظلم وتشدد کے سامنے کوئی بند باندھنے کی مؤثر کوشش کر رہے ہیں۔ انفرادی طور پر دیکھا جائے تو چھوٹے بڑے ہر شخص کے ہاتھوں میں شیطانی آلات تھمادیے گئے ہیں اور اس کے ذریعے اس کے تصرف میں دنیا کی ہر طرح کی فحاشی وعریانی اور بے حیائی وبے غیرتی دے دی گئی ہے۔ نیز ٹی وی چینلوں، سائن بورڈوں اور دیگر مختلف ذرائع سے بھی فحاشی وعریانی کو فروغ دیا جارہا ہے۔ اس طرح ایک شخص کی نہ خلوت محفوظ رہی ہے اور نہ جلوت۔ ایسے حالات میں حضو راکرم صلی الله علیہ وسلم نے مسلمانوں کو اعمال صالحہ کے ذریعے اپنی زندگی کومحفوظ او رمستحکم بنانے پر زور دیا ہے۔ حضرت ابوہریرہ رضی الله عنہ سے مروی ہے کہ حضو راکرم صلی الله علیہ وسلم نے فرمایا، ”تم اعمال صالحہ میں جلدی کرو اس سے پہلے کہ وہ فتنے ظاہر ہو جائیں جو تاریک رات کے ٹکڑوں کی طرح ہوں (اور ان فتنوں کا اثر یہ ہو گا کہ) آدمی صبح کو ایمان کی حالت میں اٹھے گا اور شام کو کافر بن جائے گا، اور شام کو مؤمن ہو گا تو صبح کو کفر کی حالت میں اٹھے گا، نیز اپنے دین و مذہب کو دنیا کی تھوڑی سی متاع کے عوض بیچ ڈالے گا۔“

الله تعالیٰ امت مسلمہ کی حالت پر رحم فرمائے۔ فتن وبلیات سے اسے محفوظ فرمائے۔ مامورات پر عمل کرنے، منہیات ومنکرات سے بچنے اور اعمال صالحہ کی توفیق عنایت فرمائے۔ وما توفیقی إلابالله علیہ توکلت وإلیہ أنیب․

 



English
عربي

ابتداء
اپنے بارے میں
جامعہ فاروقیہ
الفاروق
اسلام
قرآن
کتب خانہ
منتحب سائٹس
This site is developed under the guidance of eminent Ulamaa of Islam. 
Suggestions, comments and queries are welcomed at info@farooqia.com
ابتداء  |  اپنے بارے میں  |  جامعہ فاروقیہ  |  الفاروق  |  اسلام  |  قرآن  |  کتب خانہ  |  منتخب سائٹس
No Copyright Notice.
All the material appearing on this web site can be freely distributed for non-commercial purposes. However, acknowledgement will be appreciated.